1 مهر 1400
  -  
2021 September 23
  -  
15 صفر 1442
 
خبریں نمبر: 145 تاریخ: 2014/04/15 مناظر: 1  

سمینار عصری تعلیم میں دین کا کردار

تنظیم المکاتب کے یوم تاسیس کی مناست سے سمینار منعقد

ادارہ کی یوم تاسیس کی مناسبت سے عصری تعلیم میں دین کے کردار کے موضوع پر تنظیم المکاتب کے مرکزی دفتر میں ایک سمینار منعقد ہوا۔ جس میں ملک کے نامور علماء ، اسکالرز اور دانشوروں نے عصری تعلیم میں دین کے رول کے سلسلہ میں اپنے خیالات کا اظہار کیا ۔ سمینار میں شریک علماء و دانشوروں نے دینی تعلیم کو عصری تعلیم کا معاون قرار دیتے ہوئےناگزیرقرار دیا مقررین نے اپنی تقاریر میں اس بات پر زور دیا کہ ایک بہترین زندگی کے لئے دینی اور عصری دونوں طرح کی تعلیمات کا ہونا ضروری ہے دنیا میں دونوں طرح کیتعلیم کے یکساں طور پر نہ ہونے کی وجہ سے بحران کردار پیدا ہو رہا ہے جو اس جدید طرز تعلیم کا نتیجہ ہے جہاں دینی تعلیم کا فقدان ہے جبکہ دینی و عصری تعلیم  کا امتزاج ہی فہم اخلاق و اقدار عطا کرتا ہے اور انسان کو کامیاب بناتا ہے۔

اس سمینار میں امام جمعہ لکھنو جناب کلب جواد صاحب، آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ کے نائب صدر جناب مولا نا کلب صادق صاحب قبلہ، وزیر جنگلات فرید محفوظ قدوائی، عربی فارسی بورڈ کے چیئرمین قاضی زین الساجدین،  لکھنو یونیورسٹی کے شعبہ اردو کے سابقہ  صدرپروفیسرانیس اشفاق، سوامی اگنیویش، لکھنئو سے سماجوادی پارٹی کے لوک سبھا امید واراکھلیش مشرا، پروفیسر اختر الواسع جامعہ ملیہ دہلی وغیرہ جیسی ہستیوں نے شرکت کی اور سمینار میں اپنی شرکت کو باعث فخر قرار دیا۔
اس سیمینار کا خصوصی اجلاس 4 اپریل کو مغربین کے بعد جامعہ امامیہ اور جامعہ الزھراء کے فارغ التحصیل طلاب و طالبات کی شرکت میں منعقد ہوا ۔
اپریل کو اس سیمینار کا پہلا عمومی اجلاس صبح 7 بجکر 30منٹ پر شروع ہوا اور 11 بجکر 30 منٹ پر اختتام پذیر ہوا نیز دوسرا عمومی اجلاس 6 اپریل کو 9 بجکر 30 منٹ پر شروع اور 12 بجکر 30 منٹ پر ختم ہوگا ۔ 
۶اپریل کو 2 بجے دوپہر سے شام 5 بجے تک  خواتین کا اجلاس منعقد کیا گیا جس میں صنف نسواں کی تعلیمی ذمہ داریوں اور اسلام میں انکی اہمیت پر گفتگو ہوئی۔

سمینار میں ملک بھر میں پھیلے ہوئے مکاتب کے طلاب نے اپنے تعلیمی مظاہروں کو پیش کر کے مندوبین و شرکاء سے داد و تحسین حاصل کی ۔
کتابوں اور اسلامی گفٹس کی نمائش اور فری میڈیکل چک اپ کیمپ بھی اس سمینار کا ایک ایسا حصہ تھا۔

 

 

ماخذ: