14 مرداد 1399
  -  
2020 اوت 4
  -  
15 ذو الحجة 1441
 
خبریں نمبر: 138 تاریخ: 2014/03/31 مناظر: 1  

بین الاقوامی سمینار اسلام، مسلمین

بین الاقوامی سمینار اسلام، مسلمین اور تمام انسانیت ...

بین الاقوامی سمینار اسلام، مسلمین اور تمام انسانیت کو تکفیری تحریکوں سے لاحق ہونیوالے خطرات اور انکا حلہر

دور سے زیادہ موجودہ دور میں اسلام پر منحرف افکار سے یلغار کی جا رہی ہے، دور حاضر میں اسلامی دنیا سب سے زیادہ تکفیری فتنوں سے نقصان اٹھا رہی ہے۔ اسی تکفیری فتنے کی آگ کی وجہ سے، کوئی ایسا دن نہیں جس میں اسلامی دنیا کے کونے کونے میں بے گناہ اور معصوم مسلمانوں کا خون نہ بہایا جائے، اور وقفے وقفے سے اسلامی مقدس مقامات کو ان کی نفرت و تشدد کا نشانہ نہ بنایا جائے۔ یہ ایسی تحریکیں ہیں جن کا تعلق نہ تو مذہب تشیع سے ہے اور نہ ہی اہل سنت کے ساتھ موافق ہیں، بلکہ اسلامی تعلیمات کے ساتھ ٹکراؤ رکھنے والی کوئی متضاد تفسیر پیش کرتی ہیں۔ ایسے حالات میں اور ان غیر اسلامی و غیر انسانی تکفیری تحریکوں کا مقابلہ کرتے ہوئے، اسلامی دنیا کے علماء اور خاص طور پر شیعہ مراجع عظام نے ایک تحریک کا آغاز کیا ہے جس کا مقصد ان تکفیری تحریکوں کے عقائد و و نظریات  اور ان کے کرتوتوں کے بارے میں معلومات فراہم کرنا اور ان کے ساتھ مقابلہ کرنے کے طریقے ڈھونڈنا ہے۔ اس سلسلے میں ایک بین الاقوامی سمینار کا انعقاد کیا جا رہا ہے جس کا عنوان ’’اسلام، مسلمین اور تمام انسانیت کو تکفیری تحریکوں سے لاحق ہونے والے خطرات اور انکا حل‘‘ منتخب کیا گیا ہے۔ جسکے مختلف موضوعات پر ذیلی عناوین کچھ یوں ہیں

پہلا موضوع: تکفیری تحریکوں کا حسب و نسب
الف۔ تکفیری تحریکیں؛ ماہیت اور وجوہات؛
1۔ تکفیری تحریکوں کا مفہومی تعارف؛
2۔ تکفیری تحریکوں کے مصداقوں پر تحقیق (خوارج، بربھاری، ابن تیمیہ، تکفیری وہابیت)؛
3۔ سلفی تحریکوں کی اقسام (تکفیری، تنویری، تبلیغی، جہادی)؛
4۔ تکفیری تحریکوں کے وجود میں آنے کے اسباب؛
5۔ تکفیری سوچ کی پیدائش اور مسلمانوں کے خون و ناموس و مال کو حلال کرنے میں ان کے زعماء کے افکار و نظریات پر تحقیق۔

ب۔ تکفیری تحریکوں کے کارنامے
6. تکفیری تحریکوں کی تلوار کے سائے میں نشو و نما؛
7. نجد؛
8. حجاز (مکہ، مدینہ، طائف و …)؛
9. الشرقیہ (احساء، قطیف و …)؛
10. عراق؛
11. پاکستان؛
12. شام ؛
13. افغانستان؛
14. ایران؛
15. بحرین؛
16. باقی ممالک؛
17. مکہ میں اسلامی آثار (مقامات مقدسہ) کو مسمار کرنا؛
18. مدینہ میں اسلامی آثار (مقامات مقدسہ) کو مسمار کرنا؛
19. عراق میں اسلامی آثار (مقامات مقدسہ) کو مسمار کرنا؛
20. باقی دنیائے اسلام میں اسلامی آثار (مقامات مقدسہ) کو مسمار کرنا؛
21. تکفیری تحریکوں کی طرف سے قتل و جنایت؛ اعداد و شمار کے آئینے میں؛
22. اسلامی شناخت پیدا کرنے میں اسلامی و مقدس مقامات کا تہذیبی کردار.

 دوسراموضوع: تکفیری افکار کی ریشہ یابی
الف) تکفیری تحریکوں کے نہج و طریقے
23. تکفیری تحریکوں کے تفکر میں مقام عقل کا جائزہ اور تجزیہ؛
24. کتاب و سنت کو سمجھنے کے لئے تکفیری تحریکوں کے اصول و طریقے؛
25. تکفیری تحریکوں کے نقطۂ نظر سے دینی معرفت میں حسی روش کا کردار؛
26. تکفیری تحریکوں کے افکار میں نظریہ مرجعیت سلف کا جائزہ؛
27. تکفیری عقائد میں تقلید کا مقام.

ب۔ عقایدی بنیادیں
28. اسلامی مذاہب اور تکفیری تحریکوں کے درمیان عقیدہ توحید و شرک کا تقابلی جائزہ؛
29. اسلامی مذاہب اور تکفیری تحریکوں کے درمیان ایمان و کفر کا تقابلی جائزہ؛
30. اہل قبلہ کی حرمت تکفیر کتاب و سنت کی نظر میں؛
31. اہل قبلہ کی حرمت تکفیر علماء اسلام کی نظر میں؛
32. تکفیری تحریکوں اور خوارج کے درمیان ظاہری، اعتقادی اور عملی مماثلت؛
33. اسلامی نقطہ نظر اور تکفیری تحریکوں کے درمیان سنت و بدعت کا تقابلی جائزہ؛
34. اسلامی مذاہب اور تکفیری تحریکوں کے درمیان برزخی حیات (سماع موتی) کا تقابلی جائزہ؛
35. اسلام، صلح و دوستی اور محبت و رحمت کا آئین۔

ج) شبہات کی نشاندہی
36. اسلامی مذاہب کی نظر میں توسل اور تکفیری تحریکوں کی خطاؤں کا تقابلی جائزہ؛
37. اسلامی مذاہب کی نظر میں طلب شفاعت اور تکفیری تحریکوں کی خطاؤں کا تقابلی جائزہ؛
38. اسلامی مذاہب کی نظر میں تبرک اور تکفیری تحریکوں کی خطاؤں کا تقابلی جائزہ؛
39. اسلامی مذاہب کی نظر میں موالید و مراثی کو منانے کی مشروعیت اور تکفیری تحریکوں کی خطاؤں کا تقابلی جائزہ؛
40. اسلامی مذاہب کی نظر میں شد رحال (کوچ و ہجرت) اور تکفیری تحریکوں کی خطاؤں کا تقابلی جائزہ؛
41. اسلامی مذاہب کی نظر میں قبروں پر مزار بنانے کا جواز اور تکفیری تحریکوں کی خطاؤں کا تقابلی جائزہ ؛
42. مزارات کے پاس عبادت کرنے (دعا و نماز پڑھنے) کا تقابلی جائزہ.

تیسرا موضوع: تکفیری تحریکیں اور اسکے سیاسی اثرات و نتائج
43. دنیا میں اسلام سے خوف و ہراس کے پھیلاؤ اور تکفیری تحریکوں کے درمیان رابطہ؛
44. سامراجی قوتوں کی طرف سے تکفیری تحریکوں کی حمایت اور ان کے مقاصد؛
45. تکفیری تحریکیں اور اسلامی ممالک میں مغرب کی نئی پالیسیاں؛
46. اسلامی بیداری کے لئے تکفیری تحریکوں کے خطرات؛
47. اسلامی معاشروں کی پسماندگی پر تکفیری تحریکوں کے سیاسی و سماجی اثرات؛
48. تکفیری تحریکوں کی تبلیغات کے طریقوں کی تحقیق؛
49. تکفیری تحریکوں کی ورچوئل (انٹرنیٹ) پر فعالیت اور ان کے سٹلائٹ چینلز.

 چوتھا موضوع: تکفیر کے بحران سے نمٹنے کیلئے عالم اسلام کی تدبیریں
50. اسلامی دنیا میں میں تکفیر سے مقابلہ کرنے کی روش کی تلاش و تعارف اور اسکے اثرات؛
51. مسلمانوں کو قتل کرنے کے لئے خودکش حملوں جیسی بدعت کی ماہیت، مقاصد اور اشتیاق پر تحقیق اور ان کو متعارف کرانا اور خودکش حملوں کی حرمت؛
52. تکفیری آرگنائزیشنز کا تعارف (القاعدہ، سپاہ صحابہ، النصرہ وغیرہ…) اور ان کے عقائد و کارکردگی کا تجزیاتی جائزہ؛
53. تکفیری تحریکیں اور اسلامی تہذیب ؛
54. اسلامی نقطہ نظر اور تکفیری تحریکوں کے درمیان عورت کے مقام پر موازناتی تحقیق و تعارف؛
55. انسانی حقوق اور تکفیری تحریکیں؛
56. اسلامی نقطہ نظر اور تکفیری تحریکوں کے درمیان حکومتداری پر تقابلی تجزیہ؛
57. علمی ایجادات و اکتشافات کے بارے میں تکفیری تحریکوں کے نظریات؛
58. تکفیری تحریکوں کے شاذ و نادر فتاوا کی تحقیق و تعارف.

سمینار 23 اور 24 اکتوبر 2014ء بروز جمعرات اور جمعہ شہر قم المقدسہ میں منعقد کیا جائے گا۔ سمینار کے بارے میں یا مقالات کی ترسیل کے سلسلے میں کسی قسم کا سوال سمینار کے دفتر سے پوچھ سکتے ہیں۔
سائٹ: http://makhateraltakfir.com
سمینار کا ای میل: [email protected]

http://makhateraltakfir.com

ماخذ: